تلاش
دقیق تر تلاش
English | فارسی | Urdu | Az | العربی
صفحه اصلی > اخبار 


  چاپ        ارسال به دوست

غیر ایرانی علماء کرام کا ھدف جواب گو فقہ کا پیش کرنا ہے: رئیس جامعۃ المصطفی

مجھے امید ہے کہ اس ادارے میں تسلسل کے ساتھ فقھی مباحث کی تدریس کا نتیجہ جدید مسائل اسلامی میں متحرک اور جواب گو فقہ کی صورت میں سامنے آئے گا۔ فقہ کے اعلی تعلیمی ادارے کی نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق جدید تعلیمی سال کے افتتاح کی مناسبت سے فقہ کے اعلی تعلیمی ادارے کی مسجد میں"خدا کی طرف سے عبادات کی قبولیت کا معیار" کے عنوان سےمنعقد پروگرام میں جامعۃ المصطفی کے سربراہ حضرت آیۃ الللہ ڈاکٹر علی رضا اعرافی نے خطاب کرتے ہوئے کہا مخصوص عبادات کے ساتھ ساتھ کچھ عام عبادتیں بھِی ہیں جن کے ذریعے سے مباح اعمال کو بھی عبادت بنایا جا سکتا ہے * قصد قربت عبات کی روح ہے اانہوں نے کہا کہ عبادت قصد قربت کی وجہ سے عبادت بنتی ہے ھر وہ عمل جو خدا تک پہنچنے کا وسیلہ بنتا اس میں کچھ خاص شرائط کا یایا جانا ضروری ہے جنمیں سے سب سے پہلی شرط اخلاص ہے اور مبلغان دین کو اس شرط پر زیادہ سے زیادہ توجی دینی چاہیے۔ انہوں نے مزید کہا کیونکہ عبادت ایک مسلمان کی زندگی کا ایک حصہ اور اسلامی نہذیب کی علامت ہے اس لئے بغیر عبادے کے اسلام اور مسکمان کا تصور نہیں کیا جا سکتا اور ایک مسلمان عبادت کے بغیر انسانی کمال تک نہیں پہنچ سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ دوسروں کی ھدایت کی کوشش میں مگن ہو کر اپنی اصلاح اور تربیت کا بھول جانا تبلیغ دین کی آفات میں سے سب سے بڑی آفت ہے انہوں نے کہا کہ ھر عبادت کی قیمت انسان کی خود عمل اور خدا کی معرفت کے مطابق ہے۔ انہوں نے عبادت میں خشوع و خضوع کی اہمیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا : کسی عمل میکں خشوع و خضوع انسان کی باطنی توجہ اور اس کے منقلب ہونے کی علامت ہے جو اس کے اس عمل میں جلوہ گر ہوئی ہے ۔ جامعۃ المصطفی کے سربراہ نے مزید کہا کہ عبادت میں دنیا سے قطع تعلقی اور صرف خدا کی طرف توجہ عبادت کے کمال کا سبب بنتی ہے اور مبلغین کو اپنی روزمرہ زندگی میں ایک خاص وقت عبادت کیلئے خاص کرنا چاہیے اور عبادت کو بوجھ اور اضافی کام نہیں سمجھنا چاہیے۔ *عبادت میں انسان کو لذت کا احساس ہونا چاہیے آیت اللہ اعرافی نے مزید کہا کہ عبادت کی لذت اور مٹھاس کا عبادت میں انسان کو احساس ہونا چاہیے انہوں نے کہا کہ روایات کی روشنی میں مومن کی نشانیوں میں سے ایک نشانہ یہ ہے کہ مومن اپنی عبات میں لذت کو محسوس کرتا ہے لھذا اگر کوئی مسلمان عبادت اورشب بیداری کی وجہ سے سختی کا احساس کرے تو اسے جان لینا چاہیے کہ وہ ایمان سے اس حد تک دور ہو چکا ہے کہ اب عنوان مومن اس پر صدق نہیں کرتا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ عبادت میں استمرار اور عبادت کا بالخصوص مستحب عبادت کا لوگوں کی نگاہوں سے اوجھل ہونا، عبادات واجب اور مستحب میں اھم اور مھم کا خیال رکھنا،رزق حلال کمانے پر توجہ دینا اور عبادت میں زمانی اور مکانی فرصتوں سے استفادہ کی طرف طلاب کو خاص طور پر توجہ دینی چاہیے انہوں نے مزید کہا کہ عبادت کی توفیق خدا کی طرف سے ہوتی ہے اس لئے ایسے اعمال کو جن کا دین سے کوئی تعلق نہیں ایک مبلغ کی زندگی سے دور ہونا چاہیے۔ * امت اسلامی کے علماء کو خون آشام بھیڑیوں سے ھوشیار رہنا چاہیے حضرت آیۃ اللہ اعرافی نے اپنی تقریر میں کہا کہ امت اسلامی کے علماء کو زیرکی اور دانائی سے کام لیتے ہوئے اختلافات کو ختم کرنا چاہیے تاکہ مسلمانوں کے درمیان اتحاد اور وحدت کی فضا پیدا ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے خون آشام بھیڑیے جو حقیقت میں استکبار اور استعمار کے ایجنٹ ہیں ان کو غاصب اسرائیلی حکومت کی جنایات دکھائی نہیں دیتیں لیکن وہ بہت سارے ممالک کی علمی ترقی کے مخالف ہیں اور صرف ایسے علماء جو ان مسائل سے آشنائِ رکھتے ہوں ہی ان کا مقابلہ کر سکتے ہیں۔ .


٠٩:٠٨ - 1392/07/24    /    شماره : ٣٩٥٦٥    /    تعداد نمایش : ٤٩٠


نظرات بینندگان
این خبر فاقد نظر می باشد
نظر شما
نام :
ایمیل : 
*نظرات :
متن تصویر:
 

خروج




بازديد کنندگان اين صفحه: 1575 بازديدکنندگان امروز: 8 کل بازديدکنندگان: 35537 زمان بارگذاری صفحه: 0/6640
جملہ حقوق سائٹ مجتمع کیلئے محفوظ ہیں.